میرا صفحہ > کہانیاں > ہیں وہی Bookmark and Share
  << پچھلی کہانی  |  اگلی کہانی >>  
Sumayya Mansoor
Sumayya Mansoor
Student
ہیں وہی لوگ جہاں‌ میں اچھے
تاریخِ تخلیق Feb 14th 2013
تمام تبصرے : 3
دیکھے گئے :  952
2 افراد اس صفحہ کو پسند کرتے ہیں!

پسند کیا

Rank 1 Out of 10

کراچی میں بھی ہلکی ہلکی سردی شروع ہوچکی ہے اور رات کو کمبل میں گھس کر مونگ پھلیاں کھانے، کہانیاں سننے اور پڑھنے کا مزا ہی الگ ہوتا ہے
مجھے پتا ہے آپ بھی یہ سب انجوائے کررہے ہوں گے۔ سردیوں کے یہی دن اس طرح کی خوب موج مستی اور مزے کے ہیں۔ لیکن بچو! اِس وقت تمہیں اُن لوگوں کو نہیں بھولنا چاہیے جنہیں یہ سب میسر نہیں۔ آپ تو اپنے گھروں میں گرم گرم بستر میں بیٹھ جاتے ہیں۔ لیکن ہمیں ہمیشہ ان لوگوں کو یاد رکھنا چاہیے جن کے پاس گھر بھی نہیں، ان کے پاس نہ تو آپ کی طرح لحاف یا کمبل ہے اور نہ گرم کپڑے کہ وہ اپنے آپ کو گرم رکھ سکیں، اور جس طرح کے مزے ہم اور آپ کرتے ہیں وہ تو اس کے لیے سوچ بھی نہیں سکتے۔
سوچنے کی بات یہ ہے  کہ ہم ان کے لیے کیا کرسکتے ہیں؟ تو بچو! ہم ان کے لیے بہت کچھ کرسکتے ہیں۔ ایسی بہت سی چیزیں جو ہمارے لیے بے کار ہوتی ہیں وہ بہت سے لوگوں کے لیے قابل استعمال ہوتی ہیں۔ ہمیں ایسے لوگوں کو ڈھونڈنا چاہیے تاکہ ہم ان کی ہرممکن مدد کرسکیں۔ ہمیں جو جیب خرچ ملتا ہے وہ جمع کرکے ان کے لیے کوئی چھوٹی موٹی چیز خرید کر انہیں دے سکتے ہیں، یا پیسے بھی دے سکتے ہیں۔  ہم ہر روز کتنے سارے پیسے اُن چیزوں کے کھانے میں خرچ کردیتے ہیں جو ہمارے لیے نقصان دہ ہوتی ہیں اور جن سے بیمار ہونے کا بھی خطرہ ہوتا ہے۔ ہمیں چاہیے کہ ہم اپنے اردگرد، اپنی کلاس اور محلے میں ایسے لوگوں کو دیکھیں۔ یہ نہیں کہ ہم اُن کا مذاق اڑائیں بلکہ ہم اُن کی مدد کریں، جس سے اللہ تعالیٰ ہم سے بہت خوش ہوں۔

  << پچھلی کہانی  |  اگلی کہانی >>  

تبصرے 3
Manahil Ok! ! آچھی ھے!! Manahil
May 11th 2014
 
 
anousha ےھ ایک اچھی کاھانی ھے. Anousha
Jan 6th 2014
 
 
Engr. اچھی کہانی ہے Engr.
Mar 12th 2013
 
 

اپنا تبصرہ بھیجیں
 
 
Close
 
 
Stories Drawings Jokes Articles Poems