میرا صفحہ > کہانیاں > تین فقرے Bookmark and Share
  << پچھلی کہانی  |  اگلی کہانی >>  
Owais paracha
Owais paracha
Jennings
تین فقرے
تاریخِ تخلیق Jan 14th 2010
تمام تبصرے : 0
دیکھے گئے :  762
پسند کیا

Rank 25 Out of 10
ایک شخص تھا۔ وہ تین فقروں کو باری باری بطور تکیہ کلام استعمال کرتا تھا۔ وہ فقرے یہ تھے۔ کیا آپ واقعی سنجیدہ ہیں، ناراض مت ہوئیے، آپ تو مذاق پر اتر آئے۔
ایک مرتبہ اس شخص نے بگھی میں سفر کیا اور منزل مقصود پر پہنچ کر کرایہ ادا کرکے اتر گیا۔ کوچواں نے کہا کہ یہ تھوڑا ہے۔ یوں جھگڑا شروع ہوا۔
کرایہ پورا دیجئے۔ کوچوان بولا۔
کیا آپ واقعی سنجیدہ ہیں۔ ان حضرت نے کہا۔
سنجیدہ نہیں تو کیا مذاق کررہا ہوں، دن بھرآپ کو لیے پھرا ہوں اور اب آپ آدھے کرائے پر ٹالنا چاہتے ہیں۔
ناراض مت ہوئیے۔
میں ناراض نہیں ہورہا اپناکرایہ مانگ رہا ہوں۔ پورا کرایہ۔ سمجھے آپ۔
آپ تو مذاق پر اتر آئے۔
میں مذاق وذاق کچھ نہیں جانتا۔ میں کہتا ہوں کہ آپ براہ کرم پورا کرایہ۔
کیا آپ واقعی سنجیدہ ہیں۔
اس میں کوئی شک نہیں ہے، زور سے، اگر دن بھر دھکے کھا کر بھی سنجیدہ نہیں ہوں گا تو کب ہوں گا۔
ناراض مت ہوئیے۔
میں ناراض نہیں ہوں یقین کیجئے، آپ سچ مچ نصف کرایہ دے رہے ہیں اتنا ہی کرایہ اور عنایت فرمائیے۔
آپ تو مذاق پر اتر آئے۔
یہ مذاق ہے، غضب خدا کا، (چلا کر) پورا کرایہ مانگنا مذاق ہے اپنی مزدوری مانگنا مذاق ہے۔
کیا آپ واقعی سنجیدہ ہیں۔
ہاں سنجیدہ ہوں، بالکل سنجیدہ ہوں (چھنگھاڑ کر) سو فیصد سنجیدہ، میں کہتا ہوں آپ۔
ناراض مت ہوئیے۔
خدایا (دہاڑتے ہوئے) سمجھ میں نہیں آتا، کیا کروں، میں ہر گز ناراض نہیں ہوں، ناراض کون گدھا ہوتا ہے۔ فقط آپ اتنی ہی رقم اور دے دیجئے میں یہاں سے فوراً دفعہ ہوجائوں گا۔
آپ تو مذاق پر اتر آئے۔
ان صاحب نے کہا اور کوچوان اپنے بال نوچتا، قسمت کو کوستا ہوا چلا گیا۔

  << پچھلی کہانی  |  اگلی کہانی >>  

تبصرے 0

اپنا تبصرہ بھیجیں
 
 
Close
 
 
Stories Drawings Jokes Articles Poems