میرا صفحہ > مضامین > میرا پہلا Bookmark and Share
  << پچھلا مضمون  |  اگلا مضمون >>  
jamshed jimmi
jamshed jimmi
میرا پہلا روزہ
تاریخِ تخلیق Aug 11th 2010
تمام تبصرے : 1
دیکھے گئے :  659
1 فرد اس صفحہ کو پسند کرتا ہے!

پسند کیا

Rank 1 Out of 10
میرا نام جمشید ہے اور آج میں آپ لوگوں کو اپنے پہلے روزے کی داستان سناﺅں گا۔ 10 رمضان کو میری روزہ کشائی تھی اور سب مہمانوں کو دعوت دی گئی تھی افطار کی، سحری میں تو ہم بہت پرجوش تھے کہ آج ہم روزہ رکھیں گے اور سارے مہمان ہمارے روزہ رکھنے پر ہمیں پھولوں کے ہار پہنائیں گے اور تحائف بھی دیں گے، خیر ہم نے خوب پیٹ بھر کے سحری کھائی اور نماز پڑھ کر سوگئے۔ جب ہم سو کر اٹھے تو ہمیں یاد ہی نہیں کہ ہمارا روزہ بھی ہے اور ہم نے جاتے کے ساتھ ہی پانی کا گلاس بھرنا شروع کردیا۔ اتنے میں ابو کا وہاں سے گزر ہوا تو انہیں بڑی حیرت ہوئی کہ اس کا تو روزہ ہے، جب ابو نے ہمیں بتایا کہ بیٹا روزے میں آپ پانی کا گلاس کس لیے بھر رہے ہیں تو تب ہمارے منہ سے ایک لمبی اوہو....!!! نکلی اور ہمیں یاد آیا کہ ہمارا تو آج روزہ ہے۔ خیر ہم نے پانی کو چھوڑا اور اللہ تعالیٰ سے توبہ کی کہ ہمیں یاد نہیں تھا اتنی دیر میں ظہر کی نماز کاوقت ہوگیا اور ہم نے نماز پڑھی۔ نماز پڑھ کر جب ہم گھر میں داخل ہوئے تو دل للچا دینے والی خوشبویں آرہی تھیں، معلوم ہوا کہ مہمان زیادہ ہیں اور امی ابھی سے تیاری میں مصروف ہیں اور ان خوشبووں نے تو ہمارے پیٹ میں بل ڈالنے شروع کردیے خیر جیسے تیسے کرکے وقت گزارا۔
مغرب سے پہلے تمام مہمان گھر میںآگئے تھے اور ہمیں ہار پھول پہنانا رہے تھے اور تحائف دے رہے تھے، پھول پہن کر اور تحائف لے کر ہم پھولے نہیں سما رہے تھے اور بھوک پیاس بھی بھول گئے تھے۔ اتنے میں مغرب کی اذان ہوگئی اور ہم نے غٹاغٹ تین سے چار گلاس شربت کے پی لیے، اتنا شربت پینے کے بعد کچھ کھانے کی ہمت ہی نہیں رہی اور ہماری یہ حالت دیکھ کر سب مہمان زور زور سے ہنس دیے اور ہم شرمندہ سے ہوگئے‘ تو اس طرح گزرا میرا پہلا روزہ۔ کیوں کیسا لگا آپ کو میرا پہلا روزہ۔ آپ کی رائے کا انتظار رہے گا۔
  << پچھلا مضمون  |  اگلا مضمون >>  

تبصرے 1
Muhammad Hassam زبردست Muhammad Hassam
Aug 7th 2012
 
 

اپنا تبصرہ بھیجیں
 
 
Close
 
 
Stories Drawings Jokes Articles Poems