Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
تاریخ عالم > جدید دور
ہیروشیما پر...
جرمنی کی شکست
پرل ہاربر کی...
ہٹلر کا...
نہر سویز کی...
نہر پامانہ کا...
انقلاب روس
جنگ عظیم اول...
گھوڑے کے بغیر...
سمندر کی...
انقلاب فرانس
امریکا میں...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

تاریخ عالم

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

امریکا میں پہلا انگریزی شہر آباد ہوتا ہے

 
   
 
نئی دنیا کی دریافت کو ایک صدی گزر چکی تھی تب کہیں انگریزوں کو وہاں قدم جمانے کا موقع ملا۔ یہی سرزمین آگے چل کر انگریزی آبادی کی اکثریت کا وہ ملک بن گئی، جسے آج کل ریاست ہائے متحدہ کہتے ہیں۔ سر والٹر ریلے اور بعض دوسرے لوگ ورجینیا کو آباد کرنے کے لیے سولھویں صدی میں جو کوششیں کرچکے تھے۔ وہ پائیدار ثابت نہ ہوئیں، البتہ ورجینیا کا نام باقی رہ گیا لیکن 1607ء میں درائے جیمز کے کنارے جیمز ٹائون کے نام سے جو بستی آباد ہوئی، وہ شاملی امریکا ے مشرقی حصے میں انگریز اقت دار کا مرکز بن گئی۔
لندن کمپنی نے آباد کاروں کی جو پہلی مہم بھیجی، وہ 13 مئی 1607ء کو جیمز ٹائون میں پہنچی اور اس نے وسیع پیمانے پر کھیتی باڑی کا سلسلہ شروع کردیا، جس کا وہ مقصد تھے: اول یہ کہ زمین کی زرخیزی سے فائدہ اٹھایا جائے، دوسرے یہ کہ ہسپانیہ کے مقابلے میں اپنا قبضہ مستحکم کرلیا جائے لیکن آگے چل کر ہسپانویوں کی نسبت امریکا کے اصلی باشندے زیادہ خوفناک دشمن ثابت ہوئے۔
ایک تاریخی حقیقت ہے کہ امریکا کی سرزمین میں جیمز ٹائون انگریزوں کا پہلا شہر تھا، یعنی ریاست ہائے متحدہ امریکا اور کینیڈا میں انگریزوں نے جو بے شمار شہر اور قصبے آباد کیے، ان میں سب سے پہلا۔
 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close