Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
کہانیاں > اسلامی کہانیاں
عظمت کے مینار
بابرکت بچہ
غار والوں کی...
نیکی
چڑیا بی کے بچے
حقیقی خواب
بادشاہ کا...
کارنامے...
آخری قیمت
سونے کا تاج
رسول پاک صلی...
جنگی چال
عظمت کے مینار
تاریخ کے...
پانی دیکھ کر...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

کہانیاں

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

دوسروں کے کام آنا

 
   
 
اللہ تعالیٰ ان لوگوں کو پسند کرتا ہے جو اس کے بندوں کے کام آئیں۔ ہمارے پیاری نبی صلی اللہ علیہ وسلم ہمیشہ دوسروں کے کام آتے تھے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھی بھی جنہیں ہم صحابی کہتے ہیں سب کے کام آتے تھے۔
ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے سب سے پکے دوست حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ بھی سب کے کام آتے تھے۔ ان کے گھر کے پاس ایسی بچیوں کا گھر تھا جن کے ماں باپ اللہ میاں کے پاس چلے گئے تھے۔ بچیاں اتنی چھوٹی تھیں کہ اپنی بکریوں کا دودھ بھی نہیں دوہ سکتی تھیں۔ حضرت ابو بکر صدیقی رضی اللہ عنہ ان کے گھر جاتے اور ان کی بکریوں کا دودھ دوہ دیتے۔ جب ہمارے پیاری نبی صلی اللہ علیہ وسلم اللہ کو پیارے ہوئے تو سب لوگوں نے حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ ہی کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی جگہ اپنا حاکم یعنی خلیفہ بنایا۔ جب ان بچیوں کو پتہ چلا کہ حضرت ابو بکر صدیقی رضی اللہ عنہ خلیفہ بن گئے ہیں تو وہ فکر میں پڑ گئیں۔ کہنے لگیں:
اب ہماری بکریاں کون دوہے گا۔
حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ کو پتہ چلا تو آپ رضی اللہ عنہ نے فرمایا:
میں خلیفہ ہوگیا ہوں تو کیا ہوا۔ میں پہلے کی طرح تمہاری بکریاں دوہا کروں گا۔
بچیاں یہ سن کر خوش ہوگئیں۔
مدینہ میں ایک اندھا آدمی رہتا تھا۔ اس کے لیے اپنا کام کرنا مشکل ہوتا تھا۔ ایک دن ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے خاص صحابی حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے سوچا کہ میں کل سے اس آدمی کا کام کردیا کروں گا۔
دوسرے دن حضرت عمر رضی اللہ عنہ اس آدمی کے گھر پہنچے تو دیکھا کہ اس کا کام تو پہلے ہی کوئی کرگیا ہے۔ ا سے اگلے دن حضرت عمر رضی اللہ عنہ صبح سویرے وہاں پہنچے تو کیا دیکھتے ہیں کہ مسلمانوں کے خلیفہ حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ اس کے گھر کا کام کررہے ہیں۔ ایسے ہی کاموں کی وجہ سے اللہ تعالیٰ صحابہ رضی اللہ عنہ سے خوش تھے اور اس نے انہیں عزت دی تھی۔

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close