Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
سائنسدان > مشرقی دور
الادریسی
البیرونی
بو علی سینا
ابن الہیشم
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

سائنسدان

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

البیرونی

 
   
 
خوارزم کے پاس ایک قصبہ بیرون ہے۔ 973 میں یہاں البیرونی پیدا ہوا۔ ماں باپ غریب تھے۔ لیکن البیرونی بچپن ہی سے نہایت ذہین و طباع تھا اور پڑھنے لکھنے میں دوسرے طالب علموں سے ہمیشہ آگے رہتا تھا۔ اس کے دو استادوں نے اس کو فلکیات اور ریاضیات کی تعلیم دی جن سے البیرونی کو خاص شغف تھا۔ اس کی شہرت سن کر سلطان محمود نے اسے غزنی بلوایا اور یہاں سے وہ پنجاب و کشمیر بھی گیا۔ علم و فضل میں کوئی البیرونی کا ثانی نہیں تھا۔ آپ نے سیاروں کو اپنے محور پر اور سورج کے گرد گردش کا حساب لگایا۔ قبلہ کی سمت کا تعین اور جیومیٹری سے بہت سے مسائل آپ کے کارنامے تھے۔ اس کے علاوہ آپ نے ہی علم تقسیم الارض کا آغاز کیا۔ اور البیرونی نے ہی گیلی چیزوں کی خصوصیات کا پتہ لگایا اور فوارے میں پانی کے چرھنے کی وجہ بھی آپ ہی نے بتائی۔
البیرونی نے کوئی ایک سو کتابیں لکھی ہوں گی لیکن آج کل ان میں سے بہت ہی کم ملتی ہیں۔ اس کی سب سے بڑی اور مشہور کتاب علم ہیئت پر القانون المسعودی ہے۔ دوسری کتاب الہند ہے جس میں اس نے ہندوستان کا جغرافیہ لکھا، یہاں کے لوگوں کے رہنے سہنے کے حالات، ان کے طور طریقوں، رسموں اور مذہبوں کی تفصیل بیان کی اور ان کے علوم مثلاً ہیئت، ہندسہ اور فلسفہ کو اہل عالم کی معلومات کے لیے دلآویزی اور سلاست کے ساتھ قلمبند کیا۔ وہ اپنی کتابوں میں لاہور، پشاور، ملتان، سیالکوٹ اور جہلم کا ذکر کرتا ہے، اس سے معلوم ہوتا ہے کہ اس کا زیادہ وقت پنجاب ہی میں گزرا۔
البیرونی کا انتقال 1078 میں ہوا۔

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close