Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
سائنسدان > مغربی دور
آئن سٹائن
گیلیلیو
مائیکل فیراڈے
رونتجن
ایڈیسن
بنجمن فرینکلن
رائٹ برادران
مارکونی
گراہم بیل
آئزک نیوٹن
جیمز واٹ
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

سائنسدان

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

رونتجن

 
   
 
ولیم رونتجن نے ایکس رے کی شعاعوں کو صرف اتفاقی طور پر دریافت کرلیا تھا،لیکن اس کی سمجھ میں نہ آیا کہ یہ کیا شے ہے، یہی وجہ ہے کہ اس نے ان شعاعوں کو ایکس کا نام دیا یعنی نامعلوم۔ بہرحال ان کارآمد شعاعوں کو دریاف کرنے اور ان کو کارآمد بنانے کا سہرا اسی کے سر ہے۔
رونتجن پروشیا کا رہنے والا تھا۔ 27 مارچ 1845 کو لپنپ میں پیدا ہوا۔ ہالینڈ میں اور زیورخ کی یونیورسٹی میں تعلیم پائی۔
ایک دن رونتجن شیشے کی ایک نلی میں سے جو سیاہ کاغذ سے پوری طرح لپٹی ہوئی تھی اور جس میں سے ہوا بالکل خارج کردی گئی تھی، بجلی کی روگزار رہا تھا اگرچہ سیاہ کاغذ کی وجہ سے بجلی کی رو سے کوئی روشنی نظر نہ آتی تھی، لیکن اس نے دیکھا کہ جس وقت بجلی کی رو نلی  میں جاتی ہے، پاس پڑے ہوئے بیریم پلاٹینو سائنائیڈ کے ذرے چمک اٹھتے ہیں۔ اس نے نلی اور اس کارڈ کے درمیان جس پر وہ ذرے پڑے تھے، مختلف قسم کی اشیاء رکھ کر دیکھیں لیکن یہی معلوم ہوا کہ ان اشیاء کا سایہ کارڈ پر پڑ رہا ہے۔ مزید تجربے کیے تو ثابت ہوگیا کہ یہ شعاع ان مادوں سے گزر جاتی ہے، جن میں معمولی روشنی نہیں گزرسکتی۔
رونتجن نے بجلی اور مقناطیس کے متعلق بہت سی مفید دریافتیں کیں۔ 1901 میں اسے طبیعیات کا نوبل پرائز اور 1896 میں رائل سوسائٹی کا رمفرڈ تمغہ دیا گیا۔ تاریخ وفات 10 فروری 1923 ہے۔

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close