Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
نظمیں > مزاحیہ
بلی کا روزہ
بچارا بے قصور
بچ بچا کے
ہم فیل ہوگئے
چار مسافر
شریر ٹونی
یاد ہے
بھائی بھلکڑ
بلو کی مرغی
ٹوٹ بٹوٹ
مینا موری
ایک انوکھی...
حلوہ
ایک مزاحیہ...
بہت سے بچوں...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

نظمیں

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

اگلا   Back
 

بچ بچا کے

 
  ضیاءالحسن ضیا  
 
مجھے پیٹو سے کچھ شکوا نہیں ہے
بہت سا کھا  کے بھی اٹھتا نہیں ہے
نظر  ہے دیر  سے جس پر تمہاری
وہ  بگلا  ہے  کوئی  مرغا نہیں ہے
رکھا ہے گھر میں چوکیدار جب سے
پڑوسی  رات  بھر  سوتا  نہیں  ہے
اگر یہ چائے ہے تو پھر عجب ہے
یہ شربت ہے تو کیوں ٹھنڈا نہیں ہے
کسی کی جیب نوٹوں سے بھری ہے
کسی کے پاس اک  دھیلا  نہیں  ہے
مجھے  تم  مارنے  دوڑے  ہو جس
وہ ککڑی ہے کوئی  ڈنڈا  نہیں  ہے
وہ قرضہ لے گیا جس دن سے یارو
کبھی  اب  اپنے  گھر  ملتا  نہیں ہے
کہیں  اب  اور  ڈھونڈو  بھائی  ٹنڈے
یہاں  گوبی  تو  ہے  ٹنڈا  نہیں  ہے
ضیا  بچہ  غزل  ہے  خوب  لیکن
کسی  کی  کوئی  بھی  سنتا نہیں ہے
 
اگلا   Back

Bookmark and Share
 
 
Close