Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
نظمیں > مزاحیہ
بلی کا روزہ
بچارا بے قصور
بچ بچا کے
ہم فیل ہوگئے
چار مسافر
شریر ٹونی
یاد ہے
بھائی بھلکڑ
بلو کی مرغی
ٹوٹ بٹوٹ
مینا موری
ایک انوکھی...
حلوہ
ایک مزاحیہ...
بہت سے بچوں...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

نظمیں

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

بہت سے بچوں کا گھر

 
  احمد ندیم قاسمی  
 
ابا تو چلے گئے ہیں دفتر
امی کو بخار آرہا ہے

گھر کا سودا خریدنے کو
شیدا بازار جارہا ہے

چپکے چپکے اک ایک بچہ
بستر سے نکلتا آرہا ہے

کلثوم بنی ہوئی ہے گھوڑا
سوفے پہ جو کودے جارہا ہے

ابرار کے ہاتھ میں ہے قینچی
پردوں کو کترتا جارہا ہے

نعمان کے پاس ہے جو چاقو
کشنوں میں اترتا جارہا ہے

گھر کا ایلبم ہے نور کے پاس
ہر فوٹو کو پھاڑے جارہا ہے

تصویر جو نانی کی ہے اس میں
داڑھی مونچھیں بنرہا ہے

گلدان کو توڑ کر مجاہد
ٹکڑوں سے محل بنارہا ہے

تنویر نے کھولا یوں فریج کو
جو کچھ ہے وہ بہتا جارہا ہے

ننھا اقبال لیٹے لیٹے
ندی نالے بہا رہا ہے

سنتے ہیں کہ دودنوں میں ان کا
ایک اور بھی بھائی آرہا ہے

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close