Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
شخصیات >  دیگر نامور شخصیات
زردشت
گوتم بدھ
کنفیوشس
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

شخصیات

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   پچھلا
 

کنفیوشس

 
   
 
مختلف مذاہب کے بانیوں کو چھوڑ کر دنیا میں کنفیوشس کے سوا کوئی ایسا شخص نظر نہیں آتا جس نے اتنا زیادہ لوگوں کے کردار پر اثر ڈالا ہو۔ کنفیوشس کی پیدائش کو ڈھائی ہزار سال گزر چکے ہیں لیکن آج بھی لاکھوں کروڑوں چینی اس کی تعلیمات کو لفظ بہ لفظ دہراتے ہیں اور وہ تعلیمات تائو مذہب اور بدھ مت جیسے عظیم الشان مذہبوں کا حصہ بن چکی ہیں۔ تاہم یہ فلسفی کس الہام کا دعویدار نہ تھا، بلکہ پرانے دانشمندوں کے اقوال جمع کرکے اپنے شاگردوں کے سامنے بیان کرتا تھا۔
ابھی کنفیوشس کی عمر اکیس سال تھی کہ اس نے ان نوجوانوں کے لیے ایک درسگاہ کھولی جو اچھی حکومت اور اچھے کردار کے متعلق کچھ سیکھنا چاہتے تھے جب وہ اس درسگاہ کے قیام کے لیے شہنشاہ کے پایہ تخت میں پہنچا توتائو مذہب کے بانی لائوزے سے اس کی ملاقات ہوئی۔
سینتالیس سال کی عمر میں اس کے وطن لو میں اس کو ایک سیاسی عہدہ دیا گیا جس سے اس کو حکومت کے متعلق اپنے نظریات کو عملی جامہ پہنانے کا موقع مل گیا۔ اس کے نتائج اس قدر شاندار نکلے کہ آس پاس کی ریاستیں خوف زدہ ہوگئیں اور اس کے خلاف سازشیں کرنے لگیں۔ چنانچہ وہ تیرہ سال کے لیے جلا وطن کردیا گیا۔
اڑسٹھ سال کی عمر میں کنفیوشس جلا وطنی سے واپس آیا اور پھر آخر دم تک 479 ق م اپنی قوم کے تاریخی مواد، نظموں، عوامی کہانیوں اور معاشری رسموں کو مرتب کرنے میں مصروف رہا۔

 
Next   پچھلا

Bookmark and Share
 
 
Close