Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
شخصیات > صحابہ
حضرت امیر...
حضرت عائشہ...
حضرت ابوبکر...
حضرت سعد بن...
حضرت فاطمتہ...
حضرت خدیجہ...
حضرت حسین رضی...
حضرت خالد بن...
حضرت علی رضی...
حضرت عثمان...
حضرت عمر...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

شخصیات

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

اگلا   Back
 

حضرت امیر معاویہ رضی اللہ عنہُ

 
   
 
امیر معاویہ اسلام میں پہلے آدمی ہیں جنہوں نے خلافت میں موروثیت کی بنیاد رکھی گویا وہ پہلے مسلمان بادشاہ ہیں جنہوں نے اور قوموں کے بادشاہوں کے طریقے سے عوام پر بادشاہ اسلام کا رعب مسلط کیا لیکن خلیفہ و امیر المومنین کے القاب بھی باقی رکھے۔
امیر معاویہ کئی سال تک صوبہ شام کے حاکم رہے۔ انہوں نے اپنی دانشمندی اور حسن انتظام سے صوبے کی شادابی اور خوشحالی میں اضافہ کیا۔ حضرت علی رضی اللہ عنہ کے انتقال کے بعد جب ان کے صاحبزادے حضرت حسن رضی اللہ عنہ خلیفہ ہوئے تو معاویہ رضی اللہ عنہ سے جنگ کرنے کے بجائے وہ خلاف سے دستبردار ہوگئے اور امیر معاویہ رضی اللہ عنہ 40 ھ میں مسلمانان عالم کے خلیفہ اور امیر قرار پائے، اس میں شک نہیں کہ انہوں نے خلافہ النبوۃ کے بجائے ملوکیت قائم کی، کیوں کہ غیر مسلم ممالک پر قبضہ رکھنا تھا، لیکن چوں کہ رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے صحابی تھے اس لیے ذاتی طور پر پرہیزگار، حلیم الطبع اور فیاض انسان تھے۔
امیر معاویہ کے متعلق ان کے عرب سوانح نگاروں کی رائے یہ ہے کہ وہ سیاسیات اور عام معاشرتی تعلقات میں بے حد ضابطہ پسند، محتمل مزاج اور حلیم تھے۔
ان کا قول تھا کہ جہاں میرا چابک کافی ہو وہاں میں تلوار استعمال نہیں کرتا۔ حضرت حسن رضی اللہ عنہ کو انہوں نے لکھا کہ آپ رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے نواسے اور حضرت علی رضی اللہ عنہ کے صاحبزادے ہونے کی حیثیت سے میری نسبت خلافت کے زیادہ مستحق ہیں اگر مجھے یقین ہوتا کہ آپ خلاف کی ذمہ داریوں کو صحیح طور پر بجالاسکیں گے تو میں ضرور آپ کی بیعت کرلیتا۔ اب آپ جو کچھ مجھ سے چاہتے ہیں ارشاد کیجئے کہ میں اس کی تعمیل کروں، اس کے بعد حضرت حسن رضی اللہ عنہ کی تمام شرائط پوری کردیں اور خلافت کے مالک بن گئے اس کے بعد امیر معاویہ نے اپنے بیٹے یزید کو ولی عہد نامزد کردیا، اس سے مسلمانوں میں اختلاف رونما ہوگیا۔
اسی سال سے زیادہ عمر پا کر 60ھ 681 میں امیر معاویہ کا انتقال ہوگیا اور ان کی جگہ یزید خلیفہ ہوا۔
 
اگلا   Back

Bookmark and Share
 
 
Close