Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
شخصیات > صحابہ
حضرت امیر...
حضرت عائشہ...
حضرت ابوبکر...
حضرت سعد بن...
حضرت فاطمتہ...
حضرت خدیجہ...
حضرت حسین رضی...
حضرت خالد بن...
حضرت علی رضی...
حضرت عثمان...
حضرت عمر...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

شخصیات

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ

 
   
 
حضرت عثمان رضی اللہ عنہ کے اسلام لانے سے قبل ہی مکے میں بہت عزت تھی۔ آپ بہت شرم وحیا والے اور سخی تھے۔ آپ نے اسلام لانے سے قبل بھی کبھی شراب نہیں پی نہ بتوں کی پوجا کی۔
جب حضور اکرم نے مکے میں اپنی دعوت کا آغاز کیا تو حضرت ابو بکر صدیق کی رہنمائی سے حضرت عثمان نے بھی ابتداءہی میںاسلام قبول کرلیا۔ اس کے بعد دوسرے مسلمانوں کی طرح حضرت عثمان پر بھی ظلم و ستم شروع ہوگیا۔ ان کے چچا نے حضرت عثمان کو پکڑ کر رسی سے مضبوط باندھا اورکہا کہ جب تک تم اسلام نہیں چھوڑو گے میں تمہیں نہ کھولوں گا مگر حضرت عثمان نے ایسا کرنے سے صاف انکا کردیا۔ مجبوراً ان کے چچا کو انہیں آزاد کرنا پڑا۔ کافروں کے ظلم سے تنگ آکر حضرت عثمان بعض دوسرے مسلمانوں کے ساتھ مکے سے ملک حبشہ ہجرت کرگئے۔ جب حضور اکرم مکے سے مدینے ہجرت کرکے پہنچے تو حضرت عثمان بھی حبشہ سے مدینہ پہنچ گئے۔
حضرت عثمان کو اللہ تعالیٰ نے بہت مال و دولت سے نوازا تھا۔ مگر آپ اپنا زیادہ تر مال اللہ کے راستے میں خرچ کردیتے اور خود سادہ زندگی بسر کرتے۔
جب رسول اکرم مدینے سے ہجرت کرکے آئے تو وہاں مسلمانوں کو میٹھے پانی کی بڑی تکلیف تھی۔ میٹھے پانی کا صرف ایک کنواں تھا جس کا مالک ایک یہودی تھا۔ حضرت عثمان نے اس سے انتہائی مہنگے داموں یہ کنواں خرید لیا اور مسلمانوں کے لیے وقف کردیا۔
اسی طرح غزوہ تبوک میں مسلمانوں کے پاس سامان کی بہت کمی تھی۔ حضور اکرم نے مسلمانوں سے جہاد کے لیے سامان دینے کا کہا۔ سب مسلمانوں نے اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا حضرت عثمان نے اس موقع پر بھی بہت سے اونٹوں پر سامان لاد کر دیا۔ جس سے حضور بہت خوش ہوئے اور حضرت عثمان کو بہت سی دعائیں دیں۔ اسی طرح بہت سے مواقع پرآپ نے اللہ کی راہ میں مال خرچ کیا۔حضرت عثمان کا ایک اور بڑا اعزاز یہ تھا کہ حضور کی دوبیٹیوں کا یکے بعد دیگرے آپ سے نکاح ہوا۔ پہلے حضرت رقیہ سے اور ان کی وفات کے بعد حضرت ام کلثوم سے آپ کی شادی ہوئی۔ حضرت عثمان انتہائی عبادت گزار تھے اور راتوں کو دیر تک نمازیں پڑھتے اور بہت زیادہ روزے رکھا کرتے تھے۔
حضرت عمر فاروق کی شہادت کے بعد مسلمانوں نے حضرت عثمان کو اپنا خلیفہ منتخب کیا۔ تقریباً بارہ سال آپ نے مسلمانوں کی خلافت کے فرائض سر انجام دیے۔ آپ کے زمانے میں بھی مسلمانوں سے بہت سی جنگوں میں فتح حاصل کی۔ لوگ آپ سے بے انتہاءمحبت کرتے مگر چند بدمعاش لوگوں نے سازش کرکے آپ کو 25 ہجری میں شہید کردیا۔
اللہ تعالیٰ آپ سے راضی ہو۔
 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close