Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
تازہ ترین خبریں > سائنس
پانچ نئے...
سردی میں...
کوبرا کے پھن...
سورج کے ذرات...
بونا پلوٹو...
اینڈیور کے...
گلیلیو...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

خبر یں اور پروگرامات

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   پچھلا
 

گلیلیو سیٹیلائٹ کے ٹھیکے کا اعلان

 
   
 
فائل فوٹو
یہ منصوبہ سنہ دو ہزار سات کے دوران
اپنے خاتمے کے بہت قریب پہنچ گیا تھا
یورپ میں سیٹلائیٹ کے ذریعے سمت کا تعین کرنے والے مہنگے سسٹم گلیلیو کا ٹھیکہ جرمنی اور برطانیہ کے کنسورشیئم کو دیا گیا ہے۔

او ایچ بی اور سرے سیٹیلائٹ ٹیکنالوجی لیمیٹڈ چودہ سیٹیلائٹ تعمیر کرے گا اور اس ٹھیکے کی مالیت آٹھ سو گیارہ ملین ڈالر ہے۔ اس ٹھیکےکا اعلان یورپی کمیشن نے برسلز میں کیا۔

گلیلیو کا یہ منصوبہ امریکی گلوبل پوزیشن سسٹم (جی پی ایس) کی طرح ہے لیکن اس میں مذید بہتری پیدا کی گئی ہے۔

اس سسٹم میں جدید ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے جس کے باعث لوگ اپنی منزل تک بغیر کسی مشکل اور جلد پہنچ پائیں گے۔ یہ سسٹم لوگوں کو منزل کے بارے میں جلد اور درست معلومات فراہم کرے گا جس میں غلطی کا امکان ایک میٹر ہو گا جبکہ موجودہ جی پی آر ایس میں غلطی کا امکان کئی میٹر ہوتا ہے۔

فرانس کی آریان سپیس ان تیار کردہ سیٹیلائیٹس کو مدار میں بھیجے گی۔ آریان سپیس سیٹیلائٹس کو مدار میں بھیجنے کے لیے روسی ساخت کے راکٹ استعمال کرے گی۔

توقع کی جا رہی ہے کہ سنہ دو ہزار چودہ تک گلیلیو نیٹ ورک میں سولہ سپیس کرافٹ ہوں گے جو کہ جی پی آر ایس کے صارفین کو جلد اور درست معلومات فراہم کرنے کے لیے کافی ہیں۔

گلیلیو کو اب تک کام شروع کردینا چاہیے تھا لیکن یہ منصوبہ لاتعداد تکنیکی، کمرشل اور سیاسی مشکلات کا شکار ہو نے کے علاوہ امریکہ کی جانب سے اٹھائے جانے والے اعتراضات جس میں کہا گیا تھا نئے جی پی ایس سسٹم کے ذریعے اس کی مسلح افواج کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے کے باعث تعطل کا شکار ہو گیا تھا۔

یہ منصوبہ سنہ دو ہزار سات کے دوران پبلک، پرائیوٹ بزنس ڈویلمپنٹ کی جانب سے بنائے جانے والے ماڈل کے گر جانے کے باعث اپنے خاتمے کے بہت قریب پہنچ گیا تھا۔

گلیلیو کے اس منصوبے کو زندہ رکھنے کے لیے یورپی یونین کے ارکان نے فیصلہ کیا کہ اس منصوبے کو عطیے کے طور پر جمع کی جانے والی رقم کے ذریعے مکمل کیا جائے۔

اگر کنریکٹ کمپنیاں اپنے دعوؤں پر پوری اتریں تو امید کی جا سکتی ہے کہ گلیلیو کا یہ منصوبہ سنہ دو ہزار تیرہ کے آخر تک عارضی طور پر شروع ہو سکے گا۔
 
Next   پچھلا

Bookmark and Share
 
 
Close