Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
دریافت > سائنس
ریڈیم
دوربین
کونین
اسٹین لیس...
چیچک کا تریاق
دوران خون کا...
پنسلین
ایکسرے
ایتھر
خوردبین
سورج کے گرد...
قطب نما
بارود
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

دریافتیں

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

ایتھر

 
   
 
جمہوریہ امریکا کی ریاست جارجیا میں جیفرسن ایک قصبہ ہے۔ وہاں ایک آدمی کی گردن پر رسولی نکلی۔ ڈاکٹر کرافورڈ لونگ نے 30 مارچ 1842ء کو اس پر جراحی کا عمل کیا اور رسولی کی جگہ کو سن کرنے کی غرض سے ایتھر سے کام لیا۔ آپریشان کامیاب ہوا اور مریض کو اس دوران میں کوئی تکلیف نہ ہوئی جراحی کے لیے جسم کے مختلف حصوں کو سن کرنے کی غرض سے ایتھر کے استعمال کا یہ پہلا تجربہ تھا۔
ڈاکٹر کرافورڈ کو اس جدت کے لیے کوئی اعزاز حاصل کرنے کا خیال نہ آیا۔ غالباً اسے احساس ہی نہ ہوا کہ کوئی بڑا کارنامہ انجام پاگیا ہے۔ لیکن 1849ء میں جب دو دندان سازوں ہوریس ویلز اور ولیم مورٹن کے درمیان ایتھر کے استعمال میں پہل کرنے کے متعلق بحث چھڑی تو ڈاکٹر کرافورڈ بھی اس بحث میں شامل ہوگیا۔
ایتھر 1540ء سے ایک عاش نشہ آور شے کے طور پر استعمال ہوتا تھا۔ جارجیا کے باشندے اسی طرح اکٹھے بیٹھ کر اسے سانس کے ساتھ چڑھایا کرتے تھے، جس طرح وہ بعد میں شراب پینے لگے، اس زمانے میں عمل جراحی کے وقت درد محسوس نہ کرنے کا عام طریقہ یہ تھا کہ وسکی یا دوسری شراب پی لی جاتی یا افیون کا شیرہ استعمال کیا جاتا یا ہیپناٹزم سے کام لیا جاتا۔

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close