Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
دریافت > سائنس
ریڈیم
دوربین
کونین
اسٹین لیس...
چیچک کا تریاق
دوران خون کا...
پنسلین
ایکسرے
ایتھر
خوردبین
سورج کے گرد...
قطب نما
بارود
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

دریافتیں

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

بارود

 
   
 
قصے کہانیوں میں بتایا جاتا ہے کہ سب سے پہلے چنگیز خان نے جنگ میں بارود سے کام لیا۔ یہ بات درست ہو یا نہ ہو، لیکن تاریخ ہمیں بتاتی ہے کہ چنگیز کان کے زماے سے بہت پہلے یعنی نویں صدر مین اہل چین بارود بناتے اور اسے آتشیں ٹپاخوں میں استعمال کرتے تھے۔ یورپ میں بارود کی ایجاد کا سرا تیرھویں صدر کے دوراہیوں میں سے کی ایک کے سر پر ہے۔ انگریز راجر بیکس یا جرمن برتھو لڈ شوارٹز جارود ہی کے بل پر یورپی سپاہیوں نے روئے زمین پر حکمرانی کے اجل بچھائے۔
بارود کے لے تین چیزیں درکار تھیں: اول قلمی شورو، دوسرے گندھک، تیسرے کوئلہ، بیکن نے شورے کو صاف کرکے قلمی شورہ بنانے کا طریقہ دریافت کیا اور بارود کا نسخہ تیار کیا۔ شوراٹرز نے اس سے کام لینے کے لیے آتش بار ہتھیار بنائے۔
بہرحال بارود سازی کا بندوبست ہوگیا تو یورپ کی فوجیوں تلوار، نیزے اور تیروں کی جگہ لڑائی میں گولیاں استعمال کرنے لگیں۔
بارود سرنگیں بنانے اور چٹانیں توڑنے میں بھی استعمال ہوتی ہے۔

 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close