Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
ممالک > General
اٹلی
عمان
ایتھوپیا
امریکا
پاکستان
کوالالمپور
ایران
آسٹریلیا
فلسطین
ترکی
الجزائر
سینیگال
سری لنکا
ملائیشیا
بھارت
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

ممالک

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

اگلا   Back
 

آسٹریلیا

 
   
 
لفظ آسٹریلیا لاطینی زبان سے ماخوذ ہے جس کا مطلب جنوبی علاقہ ہے۔ یہ دنیا کا سب سے چھوٹا براعظم ہے جس کے کچھ جزائر بحر اوقیانوس اور بحر ہند میں بھی واقع ہیں۔ انڈونیشیا مشرقی تیمور اور نیوزی لینڈ اس سرزمین کے ہمسایہ ممالک ہیں۔ انیس سو ایک میں چھ خطوں پر مشتمل حکومتوںنے باہم مل جانے کا فیصلہ کیا اور یوں دولت ہائے مشترکہ آسٹریلیا وجود میں آئی۔ یہاں آزاد جمہوری سیاسی نظام ہے جس کے تحت ان چھ علاقوں کے عوام ایک ہی نام سے دنیا میں پہچانے جاتے ہیں۔
آسٹریلیا کی آبادی کم و بیش دو کروڑ دس لاکھ نفوس پر مشتمل ہے۔ کنبرا ملک کا دارالحکومت جب کہ سڈنی سب سے بڑا تجارتی شہر ہے۔ آسٹریلیا کو کھیلوں میں ایک مقام حاصل ہے۔ آسٹریلوی کرکٹ ٹیم اب تک چار مرتبہ ورلڈ کپ جیت چکی ہے، جبکہ دو ہزار دس میں ہاکی کا عالمی چیمپئن بھی آسٹریلیا ہے۔ یہ ایک کثیر القومی مملکت ہے جس میں متعدد قبائل کے لوگ صدیوں سے رہائش پذیر ہیں۔ یہ سرزمین زیادہ تر نیم صحرائی علاقے پر مشتمل ہے کہیں کہیں وسیع جنگلات بھی ہیں۔ بیسویں صدر کے وسط سے اس خطہ کی تہذیب امریکا کے زیر اثر ہے، صدیوں قبل اس خطے کو جنوب مشرقی ایشیا سے آئے ہوئے ماہی گیروں نے آباد کیا۔ یہ بنیادی طور پر شکاری لوگ تھے۔ بعد کے آنے والے دنوں میں ڈچ اور برطانوی سیاحوں نے بھی یہاں پڑاﺅ ڈالے اور کچھ نے یہاں اپنا سکہ جمانے کی کوشش کی۔ انیس سو اسی کے بعد آسٹریلیا نے پورپیوں کے ساتھ ساتھ باسیان ایشیا اور دنیا کے دیگر خطوں میں بسنے والوں کو بھی اپنی سرزمین پر خوش آمدید کہا۔ اس کا نتیجہ یہ نکلا کہ آسٹریلیا کی مملکت دنیا بھر کی تہذیبوں، مذاہب ار مختلف رنگ و نسل کے لوگوں کی آماجگاہ بن گئی۔ آسٹریلیا کا سرکاری مذہب کوئی نہیں۔ اسکول کی تعلیم پورے آسٹریلیا میں لازمی ہے جس کا دورانیہ چھ سے سولہ سال کی عمر تک ہے، اسی کے باعث یہاں کی شرح خواندگی ننانوے فیصد تک جاپہنچی ہے، یہاں اڑتیس کی تعداد میں سرکاری جامعات ہیں اور بہت سارے نجی جاداروں کے تحت چلنے والی جامعات ہیں اور بہت سارے نجی اداروں کے تحت چلنے والی جامعات بھی قائم ہیں جبکہ یہاں کی حکومت سرکاری اور نجی تمام جامعات کو اپنی طرف سے بھرپور مالی امداد مہیا کرتی ہے تاکہ تعلیم کا سلسلہ رکنے نہ پائے۔ حکومت نے فنی تعلیم پر بھی بے پناہ سرمایہ خرچ کیا ہے چنانچہ ایک سروے کے مطابق اٹھاون فیصد آسٹریلوی باشندے فنی تعلیم سے آراستہ ہیں اور یہ تعداد دنیا میں کسی بھی ملک کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ آسٹریلیا دنیا کا سب سے زیادہ کوئلہ برآمد کرنے والا ملک ہے اس کے علاوہ یہاں پیٹرولیم، سونا، چاندی اور کاپر جیسی دھاتیں بھی بکثرت پائی جاتی ہیں۔ بانوے فیصد سفید نسل کے لوگ اور ساتھ فیصد ایشیائی آباد ہیں۔ ایک فیصد کچھ اور نسلوں کے لوگ بھی ملتے ہیں۔
 
اگلا   Back

Bookmark and Share
 
 
Close