Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
ممالک > General
اٹلی
عمان
ایتھوپیا
امریکا
پاکستان
کوالالمپور
ایران
آسٹریلیا
فلسطین
ترکی
الجزائر
سینیگال
سری لنکا
ملائیشیا
بھارت
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

ممالک

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

Next   Back
 

فلسطین

 
   
 
فلسطین جسے انبیاءکی سرزمین ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ بدقسمتی سے آج یہودیوں کے قبضے میں ہے۔ فلسطین کی تاریخ پتھروں کے زمانے سے بھی قبل تک جاتی ہے۔
حضرت داﺅد علیہ السلام نے اس جگہ پر 33 سال تک حکومت کی۔ اس کے علاوہ حضرت سلیمان علیہ السلام نے بھی یہاں کئی سال حکومت کی۔
یہودیوں نے اسرائیلی سلطنت کا قیام حضرت سلیمان علیہ السلام کی وفات کے بعد ہی رکھ دیا تھا اور اپنے اس منصوبے کو پھیلانے کے لیے اپنی کوششیں تیز کردی تھیں۔
حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کے دور حکومت میں مسلمانوں نے اس خطہ کو فتح کرلیا تھا جس کے بعد یہ ملک مسلسل اسلامی حکومت کے زیر تسلط رہا جبکہ یہودیوں نے اس خطہ پر اپنا قبضہ جمانے کے لیے کئی صلیبی جنگیں بھی لڑیں۔ بدقسمتی سے مئی 1948ءمیں اسرائیل کے نام سے ناجائز ریاست کے قیام کے بعد سے یہودیوں نے فلسطین کے کئی شہر قبضے میں کرلیے۔
بیت المقدس تاریخی اعتبار سے فلسطین کے قدیم شہروں میں سے ہے۔
یہ شہر ان شہروں میں سے ایک ہے جو مسلمانوں، یہودیوں اور عیسائیوں کے نزدیک متبرک ہے۔
بیت المقدس میں واقع مسجد اقصیٰ مسلمانوں کا قبلہ اول بھی رہا ہے جس کی طرف منہ کرکے مسلمان آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی امامت میں کئ عرصے تک نماز ادا کرتے رہے۔یہی وہ مسجد ہے جہاں سے آپ صلی اللہ علیہ وسلم معراج کے لیے تشریف لے گئے تھے۔ یہیں پر حضرت داﺅد علیہ السلام اور دیگر انبیاءکے مقبرے بھی ہیں۔ جغرافیائی اعتبار سے فلسطین دو حصوں میں تقسیم ہوچکا ہے۔ ایک حصہ مغربی کنارہ ہے جہاں پر یہودیوں کا قبضہ ہے جبکہ غزہ کی پٹی میں اکثریت مسلمانوں کی ہے۔
یہ وہ واحد ملک ہے کہ جس کا دارالحکومت طے نہیں ہوا ہے اور اس ملک میں تین کرنسیاں استعمال ہوتی ہیں جن میں یہودی شیکل، اردنی دینار اور امریکی ڈالر شامل ہیں۔
زیتوں اور پھل، سبزیاں کاشت کی جاتی ہیں۔
جبکہ سیمنٹ، کپڑا اور موتی کی صنعتیں موجود ہیں۔ اس کے علاوہ اس شہر میں یہودیوں کا مقدس مقام دیوار گریہ بھی موجود ہے۔ جامعہ القدس جدید علوم کا مرکز ہے۔
یہاں کی موجودہ نسل نے فلسطین جیسے سرسبز اور خوبصورت ملک میں صرف یہودیوں کی بربریت ہی دیکھی ہے۔
یہی وجہ ہے کہ آج فلطسین اور مسلم دنیا کا بچہ بچہ نہ صرف بیت المقدس بلکہ پورے فلسطین کو آزاد کرانے کا عزم رکھتا ہے۔
 
Next   Back

Bookmark and Share
 
 
Close