Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

صفحہ اول
لائبریری
مضامین > اسلامی
خطبہ حجتہ...
مکہ مکرمہ
اسم محمد کا...
فرعون کی ممی
کتنے مہربان...
قرآن کریم کا...
عورتوں پر...
دعا
سرگرمیاں
انکل شائن
رسالہ
کیا آپ جانتے ہیں ؟
گیمز
تازہ ترین خبریں
 

مضامین

 
   

 

 

 
Bookmark and Share

اگلا   Back
 

مکہ مکرمہ

 
   
 
دنیا کا قدیم ترین شہر، کرہ ارض کا مرکز اور دنیا کے سب سے پہلے اور سب سے بڑے اسلامی انقلاب کا مقدر بننے والی یہ سرزمین مکہ مکرمہ جو کہ سعودی عرب کا اہم شہر اور عالم اسلام کا سب سے بڑا روحانی اور مقدس مرکز و منبر ہے، اعداد و شمار کے مطابق اس شہر کی کل آبادی دس لاکھ نفوس پر مشتمل ہے اور یہ شہر سطح بحر سے دو سو ستتر میٹر کی بلندی پر واقع ہے۔ یہ شہر گرم و خشک ہے۔
اس شہر میں جنت المعلی (صحابہ کرام کا مدفن) اور مشہور مساجد مسجد طوبی اور مسجد جن بھی واقع ہیں۔ صفا اور مروہ سے باہر کھڑے ہو کر پہاڑی کی جانب دیکھیں تو سفید رنگ کا چھوٹا سا مکان نظر آئے گا جو حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم  کا مقام پیدائش ہے، کوہ حرا جسے جبل نور بھی کہا جاتا ہے۔ یہیں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اعلان نبوت سے قبل اعتکاف فرمایا تھا۔
تعلیمی اعتبار سے مکہ مکرمہ ایک ترقی یافتہ شہر ہے جہاں متعدد جامعات قائم ہیں جن میں سرفہرست نام شریعہ یونیورسٹی ہے جو کا قیام انیس سو اننچاس میں عمل میں آیا جبکہ ایجوکیشن یونیورسٹی بھی قابل ذکر ہے جہاں بیرون ملک سے بھی طلباءمستفید ہوتے ہیں۔
مکہ مکرمہ سے بذریعہ سڑک آپ طائف، ریاض، جدہ اور مدینہ جاسکتے ہیں، شہر میں ٹیکسیاں، بسیں اور سرکلر ریلوے رواں دواں ہیں، حج کے زمانے میں ہر سال لاکھوں مسلمان بیت اللہ کی زیارت کے لیے یہاں جمع ہوتے ہیں، اس کے باوجود بھی یہاں کا شہری انتظام قابل تعریف ہوتا ہے، آج بھی یہ سرزمین مسلمانوں کے ایمان کی تازگی کا ذریعہ ہے۔
 
اگلا   Back

Bookmark and Share
 
 
Close