Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

سرگرمیاں   رسالہ
   
Bookmark and Share
     
سیبوں کی حرکت کٹیگیری: سائنس
تاریخ: 2010-09-14
 
اس تجربے میں آپ ایک دلچسپ مشاہدہ کریں گے۔

کرنے کے کام

دو گز دھاگا مضبوط سا لے کر اس کے دو برابر حصے کرلیں۔ ایک دھاگا ایک سیب کی ڈنڈی سے اور دوسرا دوسرے سیب کی ڈنڈی سے باندھ کر انہیں اس طرح لٹکادیں کہ ان کے درمیان صرف چند انچ کا فاصلہ ہو۔ اب دونوں سیبوں کے درمیان منہ رکھ کر زور سے پھونک ماریں۔ ِآپ کا خیال شاید یہ ہو کہ سیب ہوا کے زور سے پرے ہٹ جائیں گے لیکن یہ خیال غلط ہے جب آپ پھونک ماریں گے تو سیب یوں ایک دوسرے کے قریب آجائیں گے جیسے کوئی غیبی ہاتھ انہیں دھکیل رہا ہو۔

ایسا کیوں ہوتا ہے؟

ایسا اس لیے ہوتا ہے کہ جب ہوا کی رفتار تیز ہوجاتی ہے تو اس کا دباﺅ کم ہو جاتا ہے۔ یہ ایک کلیہ ہے اور اسے کلیہ برنولی کہتے ہیں کیوں کہ برنولی نامی ایک سائنسدان نے سب سے پہلے یہ بات معلوم کی تھی جب آپ سیبوں کے درمیان منہ رکھ کر پھونک مارتے ہیں تو سیبوں کے درمیان کی ہوا آگے کو حرکت کرتی ہے اور اس جگہ ہوا کا دباﺅ کم ہوجاتا ہے، سیبوں کے اردگرد کی ہوا سیبوں کو اس طرف دھکیلتی ہے جہاں ہوا کا دباﺅ کم ہوتا ہے۔ نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ سیب ایک دوسرے کے قریب آجاتے ہیں۔

 

 
Bookmark and Share
 
 
  • دو سیب
  • دوگز مضبوط دھاگا
 
   
Close